• کے الیکٹرک نے بجلی کے نرخوں میں 5.27 روپے تک اضافے کی تجویز پیش کردی

  • پی ایس ایکس: کے ایس ای-100 نے 2020 کے بعد سب سے زیادہ ہفتہ وار 4.9 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا

  • روپے 181.58/امریکی ڈالر پر بند ہوا، چھ سیشنز میں 6.59 روپے کا اضافہ

  • نئی حکومت کا پیٹرول کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ

  • نیپرا نے بجلی کی قیمت میں 4.85 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی

  • ایس بی پی کے ذخائر میں ایک ہفتے میں 470 ملین ڈالر کی کمی

  • پاکستان کو ایک مہینے میں 2.8 بلین ڈالر کی اب تک کی سب سے زیادہ ترسیلات موصول ہوئی ہیں

  • رمضان المبارک کے پہلے 10 دنوں میں یوٹیلٹی اسٹورز کی فروخت میں 3 ارب روپے کی کمی

  • 16 اپریل 2022 سے پٹرول کی قیمتوں میں27 روپے فی لیٹر اضافہ متوقع

  • بجٹ خسارہ 3.74 ٹریلین روپے تک پہنچنے کا امکان

  • کے الیکٹرک نے بجلی کے نرخوں میں 5.27 روپے تک اضافے کی تجویز پیش کردی

  • پی ایس ایکس: کے ایس ای-100 نے 2020 کے بعد سب سے زیادہ ہفتہ وار 4.9 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا

  • روپے 181.58/امریکی ڈالر پر بند ہوا، چھ سیشنز میں 6.59 روپے کا اضافہ

  • نئی حکومت کا پیٹرول کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ

  • نیپرا نے بجلی کی قیمت میں 4.85 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی

  • ایس بی پی کے ذخائر میں ایک ہفتے میں 470 ملین ڈالر کی کمی

  • پاکستان کو ایک مہینے میں 2.8 بلین ڈالر کی اب تک کی سب سے زیادہ ترسیلات موصول ہوئی ہیں

  • رمضان المبارک کے پہلے 10 دنوں میں یوٹیلٹی اسٹورز کی فروخت میں 3 ارب روپے کی کمی

  • 16 اپریل 2022 سے پٹرول کی قیمتوں میں27 روپے فی لیٹر اضافہ متوقع

  • بجٹ خسارہ 3.74 ٹریلین روپے تک پہنچنے کا امکان

کے الیکٹرک نے بجلی کے نرخوں میں 5.27 روپے تک اضافے کی تجویز پیش کردی

K-Electric Power

کے الیکٹرک نے نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) سے بجلی کے نرخوں میں 5.27 روپے فی یونٹ اضافے کی درخواست کی ہے۔

بجلی کے نرخوں میں اضافے کی درخواست مارچ کے فیول ایڈجسٹمنٹ چارجز کے تحت دائر کی گئی ہے اور اگر منظور ہو گئی تو کراچی کے صارفین پر 8.59 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا۔

کے الیکٹرک کی درخواست پر سماعت 27 اپریل کو ہوگی۔

15 اپریل کو نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی کی قیمت میں 4 روپے 85 پیسے فی یونٹ اضافہ کیا۔

نیپرا کے نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ بجلی کے نرخوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن ماہانہ فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ (ایف سی اے) کی وجہ سے کیا گیا ہے۔

پاور ریگولیٹری اتھارٹی نے سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی (سی سی پی اے) کی درخواست پر سماعت کے بعد یہ فیصلہ کیا۔

یہ رقم اپریل کے بلوں میں وصول کی جائے گی، اس نے مزید کہا کہ بجلی کے نرخوں میں اضافے سے صارفین پر اضافی بوجھ پڑے گا۔

نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ لائف صارفین اور کے الیکٹرک کو ٹیرف میں اضافے سے استثنیٰ حاصل ہے۔